ڈی جے سے نیوزی لینڈ کی وزیراعظم بننے تک کا سفر،وزیراعظم جسینڈا آرڈرن کی کہانی

5:00 PM 23 March

اسلام آباد (خبر نامہ 92) نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جسینڈا آرڈرن ان دنوں ایک ابھرتی ہوئی لیڈر کے طور پر سامنے آئی ہیں۔سانحہ کرائسٹ چرچ کے بعد حکومت کے فوری اقدامات، مسلمانوں کے ساتھ اظہار ہمدردی اور قائدانہ صلاحتیوں نے جسینڈا آرڈرن کو شہرت کی بلندیوں پر پہنچا دیا۔لیکن جسینڈا آرڈرن اتنی جلدی وزیراعظم کے منصب تک کیسی پہنچیں؟ان کی زندگی پر مکمل رپورٹ اس خبر میں پڑھیں۔ جسینڈا آرڈرن 26جولائی 1980ء کو نیوزی لینڈ کے شہر ہیملٹن میں پیدا ہوئیں۔ان کے والد پولیس کے محکمہ میں افسر تھے جب کہ ان کی والدہ ایک سکول میں کیٹرنگ اسٹنٹ کا کام کرتی تھیں۔ یونیورسٹی آف وائے کاٹو سے سیاست اور تعلاقات عامہ میں تعلیم حاصل کی۔ان کی پرورش ایک مورمن عیسائی کے طور پر کی گئی تاہم انہوں نے ہم جنس پرستوں کےحقوق کی حمایت کے لیے 2005ء میں مذہب سے علیحدگی اختیار کر لی تھی۔ سینڈا آرڈرن اب اپنے ملک کی وزیراعظم تو بن گئیں تاہم ایک لیڈر بننے سے پہلے ان کی زندگی بلکل مختلف تھی۔جسینڈا آرڈن کے ماضی کو دیکھیں تو معلوم ہو گا کہ ایک وقت تھا جب وہ بطور ڈی جے کام کرتی تھیں۔ 2014 میں آکلینڈ میں ہونے والے میوزیکل فیسٹیول میں 45 منٹ تک بطور ڈی جے ڈیوٹی دی،لیبر پارٹی کی رہنما بننے سے پہلے وہ بچوں میں غربت کے خاتمے کے مشن پر بھی کام کرتی رہیں۔ جسینڈار آرڈرن میوزک کی شوقین تھیں۔ایک مقامی سٹور پر وہ مخلتف قسم کے میوزک پلے کیا کرتی تھیں۔ وہ ہائی اسکول کے انتخابات میں مہم چلانے کے لئے پیش پیش ہوتی تھیں جس سے واضح ہوتا ہے کہ جسینڈا آرڈرن کو زمانہ طالب علمی سے ہی سیاست میں دلچسپ تھیں۔17 سال کی عمر میں انہوں نے لیبر پارٹی کے لئے رضاکارانہ طور پر کام شروع کیا۔

Related Post